Waqt Badal Gaya

وہ کہتے ہیں نا کہ انسان بدل گیا، انسان نہیں بدلتا.. اس کا وقت بدلتا ہے- انسان وقت کا محتاج ہوتا ہے، وقت انسان کا نہیں- ہم وقت کو روک سکتے ہیں نہ تھام سکتے ہیں لیکن وقت ہمیں اٹھا کے کہیں کا کہیں پھینک سکتا ہے

لوگ کہتے ہیں امید نہیں رکھو، امید رکھنا چھوڑ دو- کیوں بھائی؟ جب ایک چیز رب نے دل میں ڈال دی ہے تو کیوں نہ کریں

سچی امید بھی تو بس رب سے لگانی چاہیے، لیکن ہم جیسے ہیں ہم تو اس رب سے امید بھی اسکے بندوں کے لیے لگاتے ہیں- ان منزلوں سے کہیں نکلیں تو آگے جایئں

..بھولے بھٹکے

پتہ نہیں جو لکھ رہا ہوں ٹھیک بھی ہے کہ نہیں- کانپتے دل کے الفاظ ہیں، بڑی مشکل سے ایک شکل بنا کے نکلے

وہ کہتے ہیں نا کہ انسان بدل گیا، انسان نہیں بدلتا.. اس کا وقت بدلتا ہے، اور وقت سب کا بدلتا ہے

Wo kehte hain na ke insan badal gaya, insan nahi badalta.. uska waqt badalta hai. Insan waqt ka mohtaj hota hai, waqt insan ka nahi. Hum waqt ko rok sakte hain na thaam sakte hain, lekin waqt humain baha k kahin ka kahin phaink sakta hai.

Log kehte hain expect mat karo, expect kerna hi chor do. Kyun bhai? Jab Rab ne aik cheez daal di hai dil main tou kyun na krain.

Sachi umeed bhi tou bas Rab se lagani chahiye, lekin hum jese hain hum tou uss Rab se umeed bhi uske bandon k liay lagatay hain. In manzilon se kahin niklain tou agay jayen.

Bhoolay bhatkay..

Pata nahi jo likh raha hoon theek bhi hai ke nahi. Kaanptay dil ke alfaaz hain, bari mushkil ek shakal bana k nikle.

Wo kehte hain na ke insan badal gaya, insan nahi badalta.. uska waqt badalta hai. Aur waqt sab ka badalta hai.

Advertisements

4 خیالات “Waqt Badal Gaya” پہ

  1. syeda zahra

    best! best! best line likh di hey bhaaai aapy….””Wo kehte hain na ke insan badal gaya, insan nahi badalta.. uska waqt badalta ha””. Hum assay he bay-buss hen waqat ky hathon….. aur dhekhoo to kuch aaam alfaaaz say mil ker aik kitni khooobsurat statement ban jati hey na…. 😡

    پسند کریں

  2. Fizza

    لوگ کہتے ہیں امید نہیں رکھو، امید رکھنا چھوڑ دو- کیوں بھائی؟ جب ایک چیز رب نے دل میں ڈال دی ہے تو” کیوں نہ کریں

    سچی امید بھی تو بس رب سے لگانی چاہیے، لیکن ہم جیسے ہیں ہم تو اس رب سے امید بھی اسکے بندوں کے لیے "لگاتے ہیں- ان منزلوں سے کہیں نکلیں تو آگے جایئں
    these words win!
    Mjhe kisi na kaha tha "Insan koi bura nahi hota, bus us pa guzrta waqt acha ya bura hota ha”

    پسند کریں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s