آج کی ٹائم لائن: گوری پاکستان میں

14114804_10154049837213152_3316481830205658621_o

جب مجھے یہ بتایا گیا کہ میں پاکستان جارہی ہوں تو میں نے ان تمام وجوہات پرغور کرنا شروع کردیا جن کی بدولت میں اپنے آفس والوں کو راضی کر سکوں کہ مجھے مت بھیجا جائے۔ میں اپنی زندگی کے اگلے چھ مہینے گندی سڑکوں اور ٹریفک، کیچڑ اور بدبودار گدھوں کے درمیان نہیں گزارنا چاہتی تھی۔ میں اپنا وقت خود کو مکمل طور پرڈھانپ کر انتہا پسندوں اور بنیاد پرستوں کے ساتھ بالکل بھی نہیں گزرانا چاہتی تھی۔

"بیماری اور بدہضمی کے لیے تیار رہو”، لوگوں نے مجھ سے کہا۔ "تمہیں اپنی نوکری تبدیل کرلینی چاہیے”۔ "نہیں، میں کبھی پاکستان نہیں گئی لیکن میں بنگلہ دیش میں رہی ہوں اور مجھے پتہ ہے کہ ویسا ہی ہے”۔۔۔ یا پھر انڈیا، یا افغانستان جیسا۔

خوش قسمتی سے کسی نے مجھے یہ بھی کہا: "جب آپ پاکستان جاتے ہیں تو آپ دو بار روتے ہیں: پہلی بار جب آپ وہاں بھیجے جاتے ہیں اور دوسری بار جب آپ کو وہاں سے جانا ہوتا ہے”۔ تب سے سات مہینے بعد میں واقعی دو مرتبہ روئی ہوں۔ پاکستان کی اچھوتی خوبصورتی کو لفظوں میں بیان کرنا ممکن نہیں ہے۔ اس ملک میں ہر چیز اچھوتی ہے؛ قدرت، کلچر، اور اس کے شہر۔ رنگ برنگے کپڑے پہنی خواتین جب اپنے سیاہ بالوں پر اپنے  دوپٹوں کو ڈھیلا چھوڑتی ہیں۔ کرکٹ کھیلتے مرد، ایک بہترین انگلش کھیل جو کہ سفید کپڑوں میں کھیلا جاتاہے، کرکٹ یہاں گلیوں میں کھیلا جانے والا کھیل ہے جو کہ ہر گلی کے ہر کونے میں کھیلا جارہا ہوتا ہے۔ میں یہاں پرکشش ترین پہاڑیوں پر چڑھی ہوں، خوبصورت چوٹیوں میں گھری انتہائی شفاف جھیلوں میں تیر چکی ہوں، عظیم الشان مسجدوں میں گھومی ہوں اور ان گنت اقسام کی چائے پی چکی ہوں۔ میں نے بےتحاشہ طرح کے کھانے چکھے ہیں۔ میں بیمار نہیں ہوئی اور نہ ہی مجھے بدہضمی ہوئی، لیکن ہاں اتنے مزیدار کھانوں پر خود کو نہ روک پانے کی وجہ سے میرے پیٹ میں درد ضرور ہوا۔ اور آم، اوہ۔۔ آم۔

خیر۔۔ کسی بھی ملک کی خوبصورتی معنی نہیں رکھتی بلکہ آپ ہمیشہ یہ یاد رکھتے ہیں کہ اس ملک نے آپ کو کیا احساس دلایا۔ اور یہی چیز پاکستان کو الگ رکھتی ہے۔ میں نے دنیا میں کہیں بھی اتنی مہمان نوازی نہیں دیکھی۔ ناقابل یقین حد تک پرجوش لوگ، حقیقتاً نرم دل۔ میرا کہیں اتنا خیرمقدم نہیں کیاگیا۔ اور یہاں ایک مسکرانے کا رجحان ہے۔ ایک ایسا معاشرہ جہاں اتنے عرصہ سے ظلم ہورہا ہو اور وہاں پھر بھی اتنی رواداری پائی جاتی ہو۔

میں آپ کو یہ چیلنچ کرتی ہوں کہ پاکستان آکر اسے ناپسند کرکے دکھائیں، کیوں کہ ابھی تک میں ایسے کسی شخص سے نہیں ملی جسے  یہ پسند نہ آیا ہو۔ میں نے پاکستان میں سات خوبصورت مہینے گزارے ہیں اور ہر کسی کی حوصلہ افزائی کرونگی کہ اس باکمال ملک کو ایک موقع ضرور دیں۔

شکریہ پاکستان


یہ ایک ہسپانوی خاتون کلارا اریغی کی آپ بیتی کا ترجمہ ہے جو انہوں نے اپنے فیس بک پر شیئر کی اور دس ہزار کے قریب لوگ اسے آگے پھیلا چکے ہیں۔ مجھے اس آپ بیتی میں خاص بات یہ لگی کہ یہی سب باتیں ہمارے لوگ دوسرے ملکوں میں جاکر کررہے ہوتے ہیں، اور مجھ سمیت ہم یہاں اپنوں میں یہ سب نوٹس ہی نہیں کرپاتےجب تک ہمیں نوٹس کروایا ہی نہیں جاتا۔  دوسری بات یہ کہ مجھے کلارا کے لکھنے کا انداز بے حد پسند آیا۔۔ اور کافی حد تک کلارا بھی۔

Advertisements

3 خیالات “آج کی ٹائم لائن: گوری پاکستان میں” پہ

  1. The beauty and a positive face of Pakistan. That sadly ignored also by our Pakistanis. We see the -Ve things.
    I traveled a lot of parts in Pakistan. Amazing part when people know I am guest in their town they didn’t charge me for services. It happens a lot of times. In Sindh, In Gilgat, at Ghotki. I got a lot of love.
    If I ignore some bad peoples so I think I got more then 80% best and nice people in Pakistan.

    پسند کریں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s