ڈِنر

بلب کی زرد روشنی برآمدے میں پھیلی ہوئی ہےجس میں مچھر بھنبھنا رہے ہیں، دور کہیں سے گدھے کی آواز رات کی خاموشی میں ساز پھیلا رہی ہے، دیوار پر لٹکے 6 سال پرانے کیلنڈر کے پیچھے سے اک چھپکلی اپنا منہ نکالے کسی کیڑے پر نظر رکھے ہوئے ہے، کونے میں پڑے پانی کے مٹکے پر اوندھے منہ پڑا برتن اک طرف سے ٹوٹا ہوا ہے، پیڈسٹل فین کا شور ہمسایوں کے گھر کے آخری کمرے تک جا رہا ہے، ابھی ابھی گلی میں گھومتے آوارہ کتے کو کسی نے پتھر مار کے بھگایا ہے، چولہے میں جلتی لکڑیوں کے دھویں نے پورے گھر کو لپیٹا ہوا ہے، آگ ہے کہ بار بار بجھ رہی ہے، امی پھونکیں مار کے جلا رہی ہے، بچے اک دائرے میں زمین پر بیٹھے روٹی کا انتظار کر رہے ہیں، آج سالن میں آم کی چٹنی ہے۔

ایک خیال “ڈِنر” پہ

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s